Page Nav

Grid

GRID_STYLE
FALSE

میرا توسب کچھ ہی غلط ہے

میرا توسب کچھ ہی غلط ہے میرا توسب کچھ ہی غلط ہے ایک ہیڈ ماسٹر کے بارے میں ایک واقعہ مشہور ہے جب وہ کسی سکول میں استاد تعینات تھے تو انہوں ن...

میرا توسب کچھ ہی غلط ہے

everything is wrong in me

میرا توسب کچھ ہی غلط ہے

ایک ہیڈ ماسٹر کے بارے میں ایک واقعہ مشہور ہے جب وہ کسی سکول میں استاد تعینات تھے تو انہوں نے اپنی کلاس کا ٹیسٹ لیا۔
ٹیسٹ کے خاتمے پر انہوں نے سب کی کاپیاں چیک کیں اور ہر بچے کو اپنی اپنی کاپی اپنے ہاتھ میں پکڑکر ایک قطار میں کھڑا ہوجانے کو کہا۔ 
انہوں نے اعلان کیا کہ جس کی جتنی غلطیاں ہوں گی، اس کے ہاتھ پر اتنی ہی چھڑیاں ماری جائیں گی۔
اگرچہ وہ نرم دل ہونے کے باعث بہت ہی آہستگی سے بچوں کو چھڑی کی سزا دیتے تھے تاکہ ایذا کی بجائے صرف نصیحت ہو، مگر سزا کا خوف اپنی جگہ تھا۔
تمام بچے کھڑے ہوگئے۔
ہیڈ ماسٹر سب بچوں سے ان کی غلطیوں کی تعداد پوچھتے جاتے اور اس کے مطابق ان کے ہاتھوں پر چھڑیاں رسید کرتے جاتے۔
ایک بچہ بہت گھبرایا ہوا تھا۔ جب وہ اس کے قریب پہنچے اور اس سے غلطیوں کی بابت دریافت کیا تو خوف کے مارے اس کے ہاتھ سے کاپی گرگئی اور گھگیاتے ہوئے بولا:
”جی مجھے معاف کر دیں میرا توسب کچھ ہی غلط ہے۔“
معرفت کی گود میں پلے ہوئے ہیڈ ماسٹر اس کے اس جملے کی تاب نہ لاسکے اور ان کے حلق سے ایک دلدوز چیخ نکلی۔ ہاتھ سے چھڑی پھینک کر زاروقطار رونے لگے اور بار بار یہ جملہ دہراتے:
”میرے اللّٰه! مجھے معاف کردینا۔ میرا تو سب کچھ ہی غلط ہے۔“
روتے روتے ان کی ہچکی بندھ گئی۔ اس بچے کو ایک ہی بات کہتے
”تم نے یہ کیا کہہ دیا ہے
، یہ کیا کہہ دیا ہے میرے بچے!“
”میرے اللّٰه! مجھے معاف کردینا۔ میرا تو سب کچھ ہی غلط ہے"
"اے کاش ہمیں بھی معرفتِ الٰہی کا ذره نصيب ہو جاۓ اور بہترین اور صرف اللّٰه کے لۓ عمل کر کے بھی دل اور زبان سے نکلے.....
میرے اللّٰه! مجھے معاف کردینا۔
میرا تو سب کچھ ہی غلط ہے---
There is a well-known incident about a headmaster who took a test of his class when he was a teacher in a school.
At the end of the test, they checked everyone's copies and asked each child to stand in a line holding their copy in their hands.
He announced that the more mistakes he made, the more sticks he would get.
Although he was gentle and punished children with a stick so that they would be admonished instead of being persecuted, the fear of punishment was justified.
All the children stood up.
The headmaster would ask all the children the number of their mistakes and accordingly would receive sticks in their hands.
One child was very nervous. When they approached him and asked him about the mistakes, the copy fell out of his hand out of fear and he said:
"Excuse me, there's everything wrong with me."
The headmaster, who had grown up in the lap of knowledge, could not bear this sentence and a heartbreaking scream came out of his throat. Throwing the stick in his hand, Zaroqtar started crying and kept repeating the following sentence:
“My God! forgive me. Everything is wrong with me. ”
Crying, his hiccups stopped. Say the same thing to this child
"What have you said?"
"What have you said, my child?"
“My God! forgive me. Everything is wrong with me. "
I wish that we too would be blessed with a particle of divine knowledge and that the best and only for the sake of Allah would come out of our hearts and tongues .....
My god forgive me.
Everything is wrong with me ---


Free Islamic Apps


Free Learning Apps

TAGS: #DroidReaders.com when things go wrong quotes funny when someone does you wrong quotes quotes about good things coming from bad situations when you do something wrong quotes when things go wrong, and time is tough words of encouragement when everything seems to be going wrong i'm always wrong quotes when things go wrong quotes as they sometimes will #iAhmedSheraz

No comments

Contact form

Name

Email *

Message *